ہمیں فالو کریں

یمنا ندی 2023تک 90فیصد آلودگی سے پاک ہوجائے گی

ڈی جے بی نے 2023 تک دریائے یمنا کی آلودگی میں 90 فیصد کمی لانے کے لیے ایک تفصیلی ایکشن پلان وزیر اعلیٰ کے سامنے پیش کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے اس منصوبے کو گرین سگنل دے دیا ہے اور ڈی جے بی کو ہدایت کی کہ وہ 2023 تک یمنا کی آلودگی کو 90 فیصد کم کرے۔ایکشن پلان کے تحت ، ہریانہ اور اتر پردیش کے ساتھ ہریانہ اور اترپردیش کے ساتھ دہلی کے گھروں سے نکلنے والے آلودہ پانی کو جدید ٹکنالوجی کے ذریعہ ٹریٹمینٹ کر کے ، آبپاشی اور پارکس وغیرہ میں لگ بھگ 400 ایم جی ڈی پانی کو دوبارہ استعمال کیا جائے گا۔ ابھی دہلی میں صرف 90 ایم جی ڈی پانی دوبارہ استعمال ہورہا ہے

I N Bureau Updated November 18, 2020 22:18 IST
Kejriwal Govt- Yamuna Pollution
یمنا ندی 2023تک 90فیصد آلودگی سے پاک ہوجائے گی

یمنا ندی 2023تک 90فیصد آلودگی سے پاک ہوجائے گی

دہلی حکومت کا ایک پلان یہ ہے کہ یمنا ندی کو جلد سے جلد صاف سھترا کیا جائے

نئی دہلی، 18 نومبر( نڈیا نیرٹیو)

دہلی کی اروند کیجریوال حکومت نے یمنا کو آلودگی سے پاک بنانے کے لیے قدم بڑھایا ہے۔ یمنا کو آلودگی سے پاک بنانے کے لیے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے دہلی کے وزیر پانی ستیندر جین اور ڈی جے بی کے اعلی ٰعہدیداروں کے ساتھ آج ایک جائزہ اجلاس منعقد کیا۔ ڈی جے بی نے 2023 تک دریائے یمنا کی آلودگی میں 90 فیصد کمی لانے کے لیے ایک تفصیلی ایکشن پلان وزیر اعلیٰ کے سامنے پیش کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے اس منصوبے کو گرین سگنل دے دیا ہے اور ڈی جے بی کو ہدایت کی کہ وہ 2023 تک یمنا کی آلودگی کو 90 فیصد کم کرے۔ایکشن پلان کے تحت ، ہریانہ اور اتر پردیش کے ساتھ ہریانہ اور اترپردیش کے ساتھ دہلی کے گھروں سے نکلنے والے آلودہ پانی کو جدید ٹکنالوجی کے ذریعہ ٹریٹمینٹ کر کے ، آبپاشی اور پارکس وغیرہ میں لگ بھگ 400 ایم جی ڈی پانی کو دوبارہ استعمال کیا جائے گا۔ ابھی دہلی میں صرف 90 ایم جی ڈی پانی دوبارہ استعمال ہورہا ہے۔

اس کے علاوہ، ڈی جے بی ان ٹینکوں سے ٹھوس فضلہ اٹھا لے گی جس میں سیپٹک ٹینک استعمال میں ہے اور وہ بجلی پیدا کرنے کے لیے تیار ہے۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج دہلی جل بورڈ کے ساتھ جائزہ میٹنگ میں دو اہم نکات پر تبادلہ خیال کیا۔ پہلے ، یمنا آلودگی سے کیسے آزاد ہوسکتا ہے؟ اور دوسرا، جل بورڈ کے ذریعہ پانی کا دوبارہ استعمال کیا جاسکتا ہے۔ دہلی جل بورڈ نے ان دونوں نکات پر وزیر اعلی اروند کیجریوال کو ایک تفصیلی ایکشن پلان پیش کیا ہے۔ ڈی جے بی نے یمنا کی صفائی کے حوالے سے ایک پریزنٹیشن دی، جس میں کہا گیا ہے کہ جل بورڈ چار اہم نکات پر مداخلت کرے گا ، تاکہ مقررہ مدت کے اندر اندر یمنا کی صفائی ہوسکے۔ سب سے پہلے ، بادشاہ پور نالے سے ہریانہ سے یمنا میں تقریبا 90 ایم جی ڈی گندا پانی پڑتا ہے۔ اس گندے پانی کو جدید ٹکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے نالی کے اندر علاج کیا جائے گا۔
ڈی جے بی پہلے تمام ایس ٹی پی کو اپ گریڈ کرے گا اور نالیوں سے آنے والے گند نکاسی کو ٹیپ اور ٹریٹ کرکے ایس ٹی پی میں لے جائے گا۔ ہریانہ کا 90 ایم جی ڈی پانی بادشاہ پور نالے سے ہوتا ہوا یمنا میں داخل ہوتا ہے، اس پانی کا نالے میں ہی ٹریٹمنٹ کیا جائے گا۔ ہریانہ سے آنے والے 15 ایم جی ڈی گندے پانی کا ٹریٹمنٹ نریلا کے ایس ٹی پی میں کیا جائے گا۔ 50 ایم جی ڈی گندا پانی اتر پردیش سے آتا ہے، اسے کونڈلی ایس ٹی پی میں لے جا کر ٹریٹمنٹ کرایا جائے گا۔ یہ کام متعدد مراحل میں مکمل ہوگا اور سب کے لئے وقت کی حد مقرر کردی گئی ہے۔ ڈی جے بی نے بڑے پیمانے پر مارچ 2023 تک یمنا کی آلودگی میں 90 فیصد کمی لانے کے لیے ایک عملی منصوبہ پیش کیا ہے۔اس دوران دہلی میں ایس ٹی پی سے پانی کا ٹریٹمنٹ اور اس کے دوبارہ استعمال کے بارے میں بھی ایک جائزہ لیا گیا۔ دہلی میں موجودہ ایس ٹی پی سے تقریبا 520 ایم جی ڈی پانی صاف کرکے نالوں میں ڈال دیا گیا ہے۔ اس میں سے، فی الحال پی ڈی ڈبلیو ڈی اور پارکس وغیرہ میں تقریبا 90 ایم جی ڈی پانی کو دوبارہ استعمال کیا جارہا ہے، لیکن ابھی تک 430 ایم جی ڈی پانی کو دوبارہ استعمال نہیں کیا جارہا ہے۔ ڈی جے بی نے وزیر اعلی کے سامنے اس پانی کو دوبارہ استعمال کرنے کے لئے ایک ایکشن پلان پیش کیا تاکہ اس پانی کو دوبارہ کس طرح استعمال کیا جاسکتا ہے۔اس ٹریٹمنٹ شدہ پانی کو آبپاشی ، فصل، سڑکوں پر چھڑکاؤ، تعمیراتی کاموں میں دوبارہ استعمال کیا جائے گا۔

To Top