ہمیں فالو کریں

ویڈیوز


کسان احتجاج پر انڈیا نیرٹیو ٹیم کی طرف سے ایک ویڈیو پیش کیا جا رہا ہے۔ اس ویڈیو میں زرعی قوانین بل کی وضاحت اور کسان احتجاج پر بہترین تجزیہ پیش ہے۔ اس ویڈیو میں گفتگو کر رہے ہیں جناب راجیو شرما اور ان کا انٹرویو کرر رہے ہیں ڈاکٹر شفیع ایوب صاحب۔ ناظرین آپ سب کے لیے پیش ہے ایک خوب صورت سلسلہ، امید یے کہ اپنی آرا سے نوازیں گے، شکریہ


سارے جہاں سے اچھا ہندوستان ہمارا، اس مصرع کو لکھتے ہوئے علامہ اقبال نے تقریبا تمام ترقی پذیر اور ترقی یافتہ ممالک کا سفر کر چکے تھے۔ پوری دنیا کے اسفار نے اقبال کو یہ نظم کہنے پر مجبور کیا کہ ’’ سارے جہاں سے اچھا ہندستان ہمارا‘‘ آج ہم سب اس ملک کے باوقار شہری کے طور پر یوم آئین ہند منارہے ہیں کیوں کہ اس ملک کی دستور اساسی نے ہمیں کافی کچھ دیا ہے


صحت کے لیے کھیل کود ایک فائدہ مند کام ہے۔ اس کے لیے ورزش اور کھیل ضروری ہے۔ کھیل کود انسان کو بہت صحت مند بناتا ہے، اسی کے مدنظر ایک ویڈیو پیش خدمت ہے۔ اس ویڈیو کے ذریعے کوشش کی گئی ہے کہ ہندستانی معاشرے کو کھیل کود سے واقف کرایا جائے تاکہ کھیل کود کے ذریعے لوگ صحت مند ہوسکے


جمہوری ملک کی شان دستور اساسی پر ہے۔ پوری دنیا کی جمہوریت میں ہندستان کو ایک امتیاز حاصل ہے۔ ہندستان میں ہر مذہب ، رنگ ونسل کے لوگ رہتے ہیں۔ ان سب کویکساں اہمیت کانسٹی ٹیوٹشن دیتا ہے۔ آئین ہند کی یوں تو بہت ساری خصوصیات ہیں۔ اسلام نے بھی آئین ہند کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ ملک سے محبت ایک اہم دینی فریضہ ہے چناںچہ اسلام کی تعلیمات کی رو سے آئین ہند کی حفاظت ہم سب کی ذمہ داری ہے۔ آئین ہند ہی نے ہم کو ایک انوکھے دھاگے میں پرو رکھا ہے


گلگت بلتستان الیکشن 2020میں ایک ایک منصوبہ بند نظام متعارف ہورہا ہے ۔ گلگت بلتستان میں جو مسائل ہیں ان مسائل کے تدارک کے لیے یہیں کے لوگوں کی نمائندگی ہونی چاہیے ۔ اس وقت بلاول بھٹو، مریم نواز اور عمران خان کا عمل دخل گلگت بلتستان کے لیے بھی پیچیدہ مسئلہ ہے ۔ اس سے گلگت بلتستان میں مزید مسائل پیدا ہوں گے۔یہاں کے عوام سخت خلاف ہیں ، باالخصوص ہماری جماعت عوامی بیداری پارٹی اس منصوبہ بند نظام جو بننے جا رہا ہے گلگت بلتستان میں اس کی پرزور مذمت کرتی ہے۔


الیکشن 2020جو 15نومبر کو ہونے جا رہا ہے ، میں بنیاری طور پر آپ کو بتاتا چلوں کہ یہاں علاقائی جماعتوں، مسلکی رنگا رنگی اور زبانوں پر مشتمل اسمبلی کی ضرورت ہے مگر لمحۂ فکریہ یہ ہے کہ یہاں وفاقی حکومتیں اور دیگر سیاسی پارٹیاں قانون بناتی ہے ، اس سے سب سے بڑا نقصان یہاں کے عوام کا ہے کیوں کہ ان کے مسائل اور بنیادی ضرورتوں کو یکسر نظر انداز کردیا جا تا ہے۔اس لیے اس خطے میں اپنی اسمبلی ہونی چاہیے تاکہ یہاں کی عوام کی ضرورتوں کو سامنے رکھ کر قانون بنایا جا سکے۔ جب تک اس خطے کی عوام کی خود اہمیت نہیں ملتی ہے، ان کی اپنی اسمبلی نہیں ہوتی ، ان کی اپنی علاقائی جماعتوں کی اسمبلی نہیں ہوتی ہے اس وقت تک اس خطے کے مسائل اسی طرح رہیں گے۔ اور اس کے متنازع حیثیت پر وفاقی جماعتوں کا جمود ہے ، جو کالونیل نظام ہے اس سے گلگت بلتستان کے عوام جھیلتے رہیں گے جو کہ ایک طرح سے کاری ضرب ہے۔


ہندستان ایک جمہوری ملک ہے۔ جمہوری ملک میں انسان کی آزادی کا خاص خیال رکھا جاتا ہے۔ ہر انسان کو مذہبی ، معاشی، معاشرتی آزادی حاصل ہے۔ جمہوریت کی بقا کے لیے ووٹ ایک اہم ہتھیار ہے۔ ووٹ انسان کی امانت ہے ، اس لیے ووٹ سے جمہوریت کا مضبوط کیا جاتا یے، چناں چہ جمہوری حق کی بحالی کے لیے الیکشن میں ووٹ کی بہت اہمیت ہے۔ اسلام نے بھی ملک و جمہوریت کی آزادی کی تعلیم فراہم کرتا ہے۔ اس لیے ووٹ جمہوری اقدار کے تحفظ کے لیے ضروری ہے


وزیر اعظم نے کہا کہ ’’ مولانا آزاداور آچاریہ کرپلانی کو مثالی مردآہن کے طورپر یادرکھا جاتا ہے ، جنہوں نے قومی ترقی میں غیر معمولی یوگ دان کیا تھا،ان دونوں عظیم شخصیتوں کی آج سالگرہ ہے اور یہ قوم اپنے محسنوں کو خراج عقیدت پیش کررہی ہے۔


اس ویڈیو میں پاکستانی فوج کے کئی عہدداران کو دیکھایا گیا ہے۔ اس ویڈیو سے آپ اندازہ لگا سکتے ہیں کہ پاکستانی فوج اپنی مفاد کے لیے کس طرح پاکستانی لوگوں کو بلی کا بکرا بناتی ہے۔ پاکستانی فوج کی اصل کرتوت کے لیے اس ویڈیو کو ضرور دیکھیں


پاکستان میں مسنگ پرنسن کا معاملہ سامنے آیا ہے، لوگ اپنے پیاروں کے لیے گھروں سے نکل کر کراچی کی طرف کوچ کر رہے ہیں۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ پاکستان حکومت کی سازش اس مسنگ کے پیچھے روپوش ہے۔ راولپنڈی سے لوگ نکل کر کراچی کی طرف کوچ کر رہے ہیں

To Top