Urdu News

دفاعی پیداوار میں خودکفالت

Defence Minister Shri Rajnath Singh

 حکومت نے ،دفاعی آلات کے اندرون ملک ڈیزائن، ترقی اور تیاری کی حوصلہ افزائی کرنے کی غرض سے گذشتہ چند برسوں میں بہت سے پالیسی اقدامات اور اصلاحات کی ہیں، اور اس طرح ملک میں دفاعی سازوسامان کی تیاری اور ٹیکنالوجی میں خودکفالت کو فروغ دے رہی ہے۔ان اقدامات میں، دفاعی حصولیابی کے ضابطے (ڈی اے پی)-2020 کے تحت اندرون ملک ذرائع سے کپیٹل اشیاء کی سرکاری خریداری کو ترجیح دینا؛ مارچ 2022 میں  صنعت کی قیادت والے ڈیزائن اور فروخت کے لیے 18 اہم دفاعی پلیٹ فارمز کا اعلان؛ سروسز کے تمام 310 آئٹمز کی  تین’مثبت انڈیجنائیزیشن فہرستیں‘ کا نوٹیفکیشن اور دفاعی سرکاری شعبے کی کمپنیوں (ڈی پی ایس یوز) کے تمام 2958 آئٹمز کی  دو ’مثبت انڈیجنائیزیشن فہرستیں‘ کا نوٹیفکیشن ، جن کے لیے ان کے برخلاف بیان کردہ وقت کی مدت کے بعد ان کی درآمد پر پابندی عائد ہوجائے گی؛ طویل  وقت کی مدت کے ساتھ صنعتی لائسنس کے عمل کی سہل کاری؛براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری (ایف ڈی آئی) پالیسی کو آزاد کرنا جس میں خود کار طریقے کے تحت 74 فیصد تک ایف ڈی آئی کی اجازت دی گئی؛اسٹارٹ اپس اورانتہائی چھوٹی،چھوٹی اور درمیانہ درجے کی صنعتوں (ایم ایس ایم ایز) کو ملوث کرتے ہوئے دفاعی ایکسی لینس (آئی ڈیکس) اسکیم کے لیے اختراعات کا عمل ؛ سرکاری خریداری (میک ان انڈیا کو ترجیح) آرڈر 2017 کا نفاذ؛ ایم ایس ایم ایز سمیت ہندوستانی صنعت کے ذریعے ہندوستان کاری کو سہولت فراہم کرنے کی غرض سے سریجان نامی ہندوستان کاری کے ایک پورٹل کا آغاز؛ ا علیٰ تر ملٹی پلائرس  کو کام دے کر دفاعی سازوسامان کی تیاری کے لیے سرمایہ کو راغب کرنے اور ٹیکنالوجی کی منتقلی پر توجہ مرکوز کرنے کے ساتھ آفیسٹ پالیسی میں اصلاحات اور دو دفاعی صنعتی کوریڈور کا قیام، جن میں سے ایک اترپردیش اور ایک تمل ناڈو میں ہے؛ صنعت ، اسٹارٹ اپس اور اکیڈمیاکو  دفاعی تحقیق وترقی کے 25 فیصد کے ساتھ کھولنا؛ اندرون ملک ذرائع سے سرکاری خریداری کے لیے فوجی جدید کاری کے دفاعی بجٹ کی مختص رقم میں بتدریج اضافہ وغیرہ شامل ہیں۔

وزارت دفاع کے فوجی امورکے محکمے (ڈی ایم اے)،  نے 310 (100+108+101) پر مشتمل تین ’مثبت انڈیجنائیزیشن فہرستیں‘بالترتیب مورخہ 31 اگست  2020، 31 مئی 2021 اور 7 اپریل 2022 کو   جاری کی تھی۔ علاوہ ازیں، سرکاری شعبے کی دفاعی کمپنیوں (ڈی پی ایس یوز)، وزارت دفاع کے دفاعی پیداوار کے محکمے  (ڈی ڈی پی)، نے ذیلی نظاموں / اسمبلیز / ذیلی-اسمبلیز / آلات کی دو ’مثبت انڈیجنائیزیشن فہرستیں‘ بالترتیب 27 دسمبر 2021 اور 28 مارچ 2022 کو نوٹیفائی کی ہیں۔ پہلی فہرست میں 2851 آئٹمز ہیں جن میں سے 2500 آئٹمز کو پہلے ہی ہندوستان میں تیار کیا جاتا ہے۔ دوسری پی آئی ایل فہرست میں 107 جامع اہم لائن ری پلیس منٹ  اکائیوں / اہم سب اسمبلیز شامل ہیں۔

ان تمام فہرستوں کو وزارت دفاع / سرینجان کی ویب سائٹ اور وزارت دفاع کے دفاعی پورٹل پر پبلک ڈومن میں دستیاب کرایا گیا ہے۔ ان فہرستوں میں دفاعی پیداوار کی بہت ساری اشیاء شامل ہیں جن میں ہلکے ٹینکس، ہیلی کاپٹر، بغیر پائلٹ کے فضائی وہیکلز شامل ہیں، جن کی درآمد پر بیان کردہ مقرر وقت کے بعد پابندی عائد ہوجائے گی۔

یہ معلومات دفاع کے وزیر مملکت جناب اجے بھٹ نے ، جناب ایم شنمگم کو آج راجیہ سبھامیں ایک تحریری جواب میں فراہم کیں۔

Recommended