اومیکرون سے مقابلہ کرنے کو بھارتی افواج بیمسٹک ممالک کے ساتھ تیار

https://urdu.indianarrative.com/bimstec.webp

اومیکرون سے مقابلہ کرنے کو بھارتی افواج بیمسٹک ممالک کے ساتھ تیار

ملک میں کورونا وائرس کی نئی قسم اومیکرون کی دستک کے بعد بھارتی فوجیں بھی الرٹ ہوگئی ہیں۔ بھارتی افواج بیمسٹک ممالک کے ساتھ وبائی امراض کے پس منظر میں راحت پر خصوصی توجہ دینے کے ساتھ ایک ملٹی نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ مشق کا انعقاد کر رہی ہے۔ اس کی تیاری کے سلسلے میں منگل کو منعقدہ کانفرنس میں مسلح افواج کے سربراہ جنرل بپن راوت اور آرمی چیف جنرل منوج مکند نروانے نے وائرس سے پیدا ہونے والی وبائی امراض سے نمٹنے کے لیے تیار رہنے پر زور دیا ہے۔

سی ڈی ایس جنرل راوت نے تینوں خدمات کے لیے کہا کہ ہم سب کا ایک ساتھ ہونا بہت ضروری ہے تاکہ بیمسٹک ممالک میں کسی بھی قسم کی آفت کی صورت میں ہم ایک دوسرے کا ساتھ دے سکیں۔ اب تک مختلف آفات آتی رہی ہیں جن میں کچھ قدرتی، کچھ انسان ساختہ شامل ہیں۔ سب سے بڑھ کر یہ کہ وائرس سے پھیلنے والی کورونا وبا کئی شکلوں میں بدل رہی ہے جس کے لیے ہمیں تیار رہنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ کورونا کی نئی اقسام کا آنا ظاہر کرتا ہے کہ یہ وبا ابھی ختم نہیں ہوئی ہے۔ لہٰذا، بھارتی فوج کورونا کا مقابلہ کرنے کے مقصد سے پینکس - 21 ملٹی نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ مشق کر رہی ہے۔

چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت نے بیمسٹک ممالک کے درمیان دفاعی تعاون ' پر رکن ممالک کی سیکورٹی اور عدالتی ایجنسیوں کے درمیان دفاعی تعاون کو آسان بنانے کے لیے مشترکہ قانونی ڈھانچہ بنانے اور معلومات کے تبادلے کے طریقہ کار کے قیام کی اہمیت کو اجاگر کیا۔ وزیر مملکت برائے دفاع اجے بھٹ نے شرکاء کی توجہ بھارت کی ’پڑوسی پہلے‘ پالیسی کے حصے کے طور پر بیمسٹک ممالک کی اہمیت کی طرف مبذول کرائی۔ انہوں نے تشریح کرتے ہوئے کہا کہ ایک وائرل وباء کی تصدیق پس منظر میں قدرتی آفات کا کی روک تھام کا انتظام خطرناک مسئلہ پیدا کرتا ہے جس کا مقابلہ کسی ایک ایجنسی نہیں کرسکتی بلکہ اس کے لئے پورے ملک کے نقطہ نظر کی ضرورت ہے۔