افغان فوج نے متشدد گروپ طالبان پر آسمان سے آگ اور گولے برسائے

https://urdu.indianarrative.com/Afghan_Forces.jpg

افغان فوج

تحریر: راجیو شرما

طالبان پر آسمان سے موت کی بارش ہو رہی ہے ، افغان فوج نے کئی اہم شہروں پر دوبارہ قبضہ کر لیا

امریکی فوجیوں کے انخلا کا فائدہ اٹھاتے ہوئے افغانستان پر حملہ کرنے والے طالبان پر ایک بار پھر  سےآسمان سے موت کی بارش ہو رہی ہے۔ طالبان افغانستان پر قبضہ کر کے شریعت نافذ کرنا چاہتا ہے۔ درحقیقت شریعت نافذ کرنا ایک بہانہ ہے ، طالبان افغانوں کی وافر قدرتی دولت پر قبضہ کرنا چاہتا ہے۔ افغانستان کو افیون کا ملک بنانا چاہتا ہے۔ پاکستان کی اشتعال انگیزی پر چند طالبان لوگ اپنے فائدے کے لیے افغانستان کو تباہ کرنا چاہتے ہیں۔

پاکستان سوچ رہا ہے کہ اگر افغانستان طالبان کے قبضے میں آ گیا تو اس کی رسائی براہ راست وسطی ایشیا تک ہو گی اور وہ بھارت پر مزید دباؤ ڈال سکے گا۔ اگر افغانستان میں شرعی حکمرانی لانی تھی تو پہلے سعودی عرب پر حملہ ہونا چاہیے تھا۔ متحدہ عرب امارات پر حملہ کرنا تھا لیکن اس کا مقصد شریعت کی آڑ میں لوگوں کا استحصال کرنا ہے۔

امریکہ طالبان کے اصل اقدام سے واقف تھا ، لیکن وہ طالبان کے خلاف کامیاب آپریشن نہیں کرسکا۔ امریکہ نے ایک بار پھر افغانستان سے اپنے انخلاکے ساتھ اور قتل و غارت کے درمیان طالبان پر موت کی بارش شروع کردی ہے۔ امریکہ نے افغان فوج کے ساتھ مل کر آسمان سے طالبان پر شدید بمباری کی ہے۔ افغان فورسز نے کئی اسٹریٹجک شہروں پر دوبارہ قبضہ کر لیا ہے ، جس میں سیکڑوں طالبان مارے گئے ہیں۔

افغان حکومت کی جانب سے ایک ویڈیو بھی جاری کی گئی ہے ، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ طالبان کے ایک اڈے کو بمباری سے تباہ کر دیا گیا ہے۔ دھماکہ اتنا زوردار ہے کہ دھواں آسمان کی طرف ایسے بڑھ رہا ہے کہ گویا آسمان  کو ڈھانپ لیاہو۔ قندھار کے ضلع جیرائی میں سیکڑوں دہشت گرد مارے گئے ہیں جب کہ ان کی ایک بڑی تعداد زخمی ہو کر اپنی جان بچانے کے لیے بھاگ گئی ہے۔ افغان حکومت نے کہا ہے کہ کئی بڑے شہروں میں جنگ کے دوران سیکڑوں دہشت گرد مارے گئے ہیں اور تقریبا 1000زخمی ہوئے ہیں۔

افغان حکومت نے سیکورٹی فورسز کی کامیابی کو ایک ایسے وقت میں دنیا کے سامنے رکھا ہے جب امریکی فوجیوں کے انخلا کے بعد طالبان نے افغانستان پر تیزی سے قبضہ کرنا شروع کردیا تھا۔

ہندی میں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں