Urdu News

کیا بنجامن نیتن یاہو ایک بار پھر سنبھالیں گے اسرائیل کی ذمہ داری؟

بنجامن نیتن یاہو

سابق وزیراعظم بنجامن نیتن یاہو نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ 18 ماہ تک اقتدار سے دور رہنے کے بعد ایک بار پھر اسرائیل کی باگ ڈور سنبھالیں گے۔ انہوں نے بدھ کے روز دعویٰ کیا کہ ان کی لیکوڈپارٹی حال ہی میں ہونے والے انتخابات کے ووٹوں کی گنتی میں بڑی فتح کی طرف بڑھ رہی ہے۔

پچھلے چار سالوں سے اسرائیل کی سیاست میں مسلسل اتھل پتھلجاری  ہے۔ پچھلے چار سالوں میں پانچ الیکشن ہو چکے ہیں۔ پانچویں بار ہونے والی پولنگ کے نتائج جاننے کے لیے ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔ اب تک 70 فیصد ووٹوں کی گنتی ہو چکی ہے۔ اب تک کی گنتی کی بنیاد پر نیتن یاہو نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کی دائیں بازو کی لیکوڈ پارٹی بھاری اکثریت سے فتح کی طرف بڑھ رہی ہے۔

پارٹی ہیڈکوارٹر میں اپنے حامیوں سے خطاب کرتے ہوئے نیتن یاہو نے کہا کہ ان کی پارٹی نے اسرائیل کے عوام کا اعتماد جیت لیا ہے۔ ان کی پارٹی انتخابات میں بڑی فتح کی طرف بڑھ رہی ہے۔ اسرائیل کے ٹی وی چینلز نے ووٹنگ کے بعد رائے شماری بھی کروائی جس میں نیتن یاہو اور ان کے اتحادیوں کو نئی حکومت بنانے کے لیے درکار 61 سیٹیں جیت کر اکثریت حاصل کرنے کی توقع تھی۔

نیتن یاہو نے اپنے حامیوں سے کہا ہے کہ وہ حتمی نتائج آنے تک انتظار کریں۔ اگر نیتن یاہو کا حکومت بنانے کے لیے انتخابات جیتنے کا دعویٰ درست ثابت ہوا تو وہ 18 ماہ بعد دوبارہ اسرائیل کے وزیر اعظم بن جائیں گے۔

اس سے پہلے وہ 12 سال تک اسرائیل کے وزیر اعظم رہ چکے ہیں۔ پچھلے سال سینٹرلسٹ لیپڈ لبرل، دائیں بازو اور عرب پارٹی کے اتحاد نے ان کی لیکوڈ پارٹی کو اقتدار سے بے دخل کر دیاتھا۔

Recommended